Breaking News
Home / خبریں / عالمی خبریں / گستاخانہ خاکوں کیخلاف مختلف شہروں میں احتجاجی ریلیاں
گستاخانہ خاکوں کیخلاف مختلف شہروں میں احتجاجی ریلیاں

گستاخانہ خاکوں کیخلاف مختلف شہروں میں احتجاجی ریلیاں

گستاخانہ خاکوں کے مقابلے کیخلاف ملک کے مختلف شہروں میں ریلیاں نکالی گئیں اور شرکا نے ہالینڈ کی حکومت کے خلاف احتجاج کیا۔

بلوچستان کے شہر حب کے علاقے وندر میں ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کیخلاف شہریوں نے ریلی نکالی اور نعرے بازی کی۔ مظاہرین نے کہا کہ آزادی اظہار رائے کے نام پر نبی کریم ﷺ کی شان میں گستاخی کی جارہی ہے، جو کسی صورت برداشت نہیں کریں گے، اقوام متحدہ اور عالمی برادری اس مسئلے کی سنگینی کو سمجھے اور مقابلے کو رکوائے، ورنہ حالات خراب ہوسکتے ہیں۔

پشاور میں ضلع کونسل کا اجلاس ہوا جس میں ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کے خلاف قرارداد منظور کرلی گئی۔ ضلع کونسل اراکین نے احتجاج کرتے ہوئے ہالینڈ سے سفارتی تعلقات ختم کرنے کا مطالبہ کیا۔

بہاولنگر میں آل ڈیپارٹمنٹ اور ایپکا یونین کی جانب سے توہین آمیز خاکوں کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی۔  لاہور میں بھی جامعہ نعیمیہ کے طلبا نے لاہور پریس کلب تک احتجاجی ریلی نکالی جس کی قیادت جامعہ نعیمیہ کے سربراہ ڈاکٹر راغب نعیمی نے کی۔ فیروزوالہ میں شاہدرہ چوک پر تحریک لبیک یارسول اللہ کے کارکنان نے ہالینڈ میں نبی کریم ﷺ کے خلاف شائع ہونے والے خاکوں کے خلاف احتجاج کیا۔

ادھر مذہبی جماعتوں کی جانب سے لاہور میں داتا دربار سے اسلام آباد تک لانگ مارچ کیا جارہا ہے۔  منتظمین کے مطابق لانگ مارچ میں شرکا جزبہ ایمانی اور حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی محبت کے تحت شرکت کر رہے ہیں کہ ناموس رسالت صلی اللہ علیہ وسلم کی حفاظت کے لیے سب کچھ قربان کریں گے ۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ گستاخانہ خاکے شائع کرنے والے دنیا بھر کے ڈیڑھ ارب سے زائد مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کر رہے ہیں، یہ مقابلے کروانے والے دنیا کے سب سے بڑے دہشت گرد ہیں۔

واضح رہے کہ رواں سال جون میں ہالینڈ کی اسلام مخالف جماعت فریڈم پارٹی آف ڈچ کے متنازع رہنما گیرٹ ولڈرز نے پارلیمنٹ میں گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ کروانے کا قبیح اعلان کیا تھا۔ پاکستان نے 20 اگست کو گستاخانہ خاکوں کے مقابلے کے انعقاد کے معاملے پر ہالینڈ کے ناظم الامور کو دفتر خارجہ طلب کرکے شدید احتجاج بھی کیا تھا۔

تحریک حرمت رسول ﷺ پاکستان کے رہنماﺅں نے کہا ہے کہ تحفظ حرمت رسول ﷺ کیلئے عملی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔سینٹ میں گستاخانہ خاکوں کیخلاف متفقہ قرارداد کی منظوری اور وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے اقوام متحدہ میں قرارداد پیش کرنے کا اعلان خوش آئند ہے۔مسلم ممالک ہالینڈ کی مصنوعات کا بائیکاٹ اور اس سے سفارتی تعلقات منقطع کریں۔ مغربی ملکوں کے حکمران شان رسالت ﷺ میں گستاخیاں کرنے والوں کو شہ دے رہے ہیں۔ نبی اکرم ﷺ کی شان اقدس میں گستاخیاں ناقابل برداشت ہیں۔عالمی سطح پر تمام انبیاءکی حرمت کے تحفظ کیلئے قانون سازی کی جائے۔ تحریک حرمت رسول ﷺ کے چیئرمین مولانا امیر حمزہ، ڈاکٹر فرید احمد پراچہ، پیر سید ہارون علی گیلانی،محمد یعقوب شیخ ،حافظ عاکف سعید، مولانا محمد امجد خاں،مولانا عبدالرﺅف فاروقی، علامہ ابتسام الہٰی ظہیر، حافظ عبدالغفار روپڑی، خواجہ معین الدین محبوب کوریجہ اور حافظ کاظم رضانے اپنے مشترکہ بیان میں کہاکہ نبی کریم ﷺ کی عزت و حرمت کے مسئلہ پر کوئی مسلما ن خاموش نہیں رہ سکتا۔ شان رسالت ﷺ میں گستاخیاں کرنے والے ملکوں سے سفارتی تعلقات قائم رکھنے کا کو ئی جواز نہیں ہے۔ مسلم ممالک ہالینڈ کے سفیروں کو ملک بدر اور اپنے سفیر واپس بلائیں۔مغربی ممالک کو صاف طور پر بتادیا جائے کہ توہین رسالت ﷺ پر کوئی کمپرومائز نہیں کیاجاسکتا۔تحریک حرمت رسول ﷺ کے رہنماﺅں نے کہاکہ نظریاتی اختلافات کو بالائے طاق رکھ کر حرمت رسولﷺ کے تحفظ کے لئے سب کو متحد ہونا پڑے گا۔توہین آمیز خاکوں کی اشاعت سب سے بڑی دہشت گردی ہے۔ اگر حکمران چاہتے ہیں کہ ملک سے دہشت گردی کا خاتمہ ہو اور مسلمانوں کے دل آپس میں جڑیں تو اللہ کی مدد کے حصول کے لئے پاکستان کی طرف سے توہین آمیز خاکوں کے خلاف عالمی سطح پر قانون سازی کے لئے تحریک کھڑی کریں۔اسلامی ممالک کا اجلاس بلائیں اور حرمت رسولﷺ کے حوالہ سے قانون سازی کروا کے سب سے بڑی اور عالمی دہشت گردی کا راستے بند کریں۔انہوںنے کہاکہ نبی کریم ﷺ کی حرمت اتحاد امت کی بنیاد ہے۔ہم نے اس مسئلے پر سب کو اکٹھا کرنا ہے۔ مسلمانوں کے جذبات مشتعل کرنے کیلئے جان بوجھ کر گستاخیاں کی جارہی ہیں۔مسلم حکمران گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ رکوانے کیلئے ہالینڈ پر دباﺅ بڑھائیں۔انہوں نے کہاکہ مسلمان اسلام ، قرآن اور نبی اکرم ﷺ کی حرمت کے دفاع کیلئے متحد و بیدار ہو جائیں۔ صلیبیوں و یہودیوں کی گستاخیوں پر جس کسی کی غیرت بیدارنہیں ہوتی اسے اپنے ایمان کی فکر کرنی چاہیے۔انہوںنے کہاکہ مسلم حکمران ڈالر اور پاﺅنڈ کی غلامی سے نکل کر جرا ت مندانہ راستہ اختیار کریں۔شان رسالت ﷺ میں گستاخیوں پر کسی صورت خاموشی
اختیار نہیں کی جاسکتی۔
امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے سینیٹ میں گستاخانہ خاکوں کیخلاف قرار داد کی متفقہ طور پر منظوری اور وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے اقوام متحدہ میں قرارداد پیش کرنے کے اعلان کو خوش آئند قرار دیا اور کہا ہے کہ مسلم حکمران تحفظ حرمت رسول ﷺ کے مسئلہ پر امت مسلمہ کے جذبات کی ترجمانی کریں اور بین الاقوامی سطح پر توہین انبیاءاور قرآن پاک کی بے حرمتی کی سزا کا قانون پاس کروانے کی کوشش کریں۔ نبی اکرم ﷺ کی حرمت کا تحفظ ہر مسلمان کے ایمان کا حصہ ہے۔ شان رسالت ﷺ میں گستاخیوں پر کسی صورت خاموشی اختیار نہیں کی جاسکتی۔ اپنے بیان میں انہوںنے کہاکہ تو ہین آمیز خاکے بنانے والوں کی گستاخیاں روکنے کیلئے مشترکہ لائحہ عمل ترتیب دیا جائے۔مسلمان ملکوں کو چاہیے کہ وہ دنیا بھر میں اپنے سفارت خانوں کو متحرک کریں ۔ او آئی سی کا سربراہی اجلاس بلایا جائے اور اس مسئلہ پر جرا ¿تمندانہ اقدامات اٹھائے جائیں۔مسلم حکمرانوں کو صاف طور پر کہہ دینا چاہیے کہ ہالینڈ سمیت جو کوئی ملک بھی شان رسالت ﷺ میں گستاخی کا مرتکب ہو ا‘ اس سے ہر قسم کے معاہدات اورسفارتی تعلقات ختم کردیے جائیں گے۔ انہوںنے کہاکہ صلیبیوں و یہودیوں کی طرف سے نبی اکرم ﷺ کی شان میں گستاخیاں 60سے زائد مسلم ممالک کے حکمرانوں اور ڈیڑ ھ ارب سے زائد مسلمانوں کیلئے بہت بڑا امتحان ہے کہ یہ نبی اکرم ﷺ کی حرمت کے تحفظ کیلئے کیا کردار ادا کرتے ہیں؟ شان رسالت ﷺ میں گستاخیاں روکنے کیلئے مسلمانوں کواتحاد و یکجہتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے تحفظ حرمت رسولﷺکا فریضہ اداکرناچاہیے۔ پوری امت مسلمہ نبی اکرمﷺ کی حرمت کے تحفظ کیلئے ہر قسم کی قربانی پیش کرنے کیلئے تیار ہے۔ حافظ محمد سعید نے کہاکہ نبی اکرمﷺ کی حرمت کادفاع پورے عالم اسلام کا دفاع کرنا ہے۔ حرمت رسول ﷺ کے تحفظ کیلئے ہر مسلمان کو بڑھ چڑھ کر کردار اداکرنا چاہیے۔ شان رسالت ﷺ میں (نعوذ باللہ )گستاخی مسلمانوں کیلئے غیرت و حمیت کا مسئلہ ہے ۔آج وقت ہے کہ امت مسلمہ اسلام، قرآن اور نبی اکرم ﷺ کی حرمت کے تحفظ کیلئے متحدہو جائے۔ اگر مسلمان ایسا کرتے ہیں تو اللہ تعالیٰ ان کی حکومتوں اور مسلمان ملکوں کا تحفظ کرے گا ۔ جب مسلمان اسلام کے دفا ع کیلئے کھڑے ہوتے ہیں تو پھر آسمانوں سے رحمتیں و برکتیں نازل ہو تی ہیں۔ وہ وقت قریب ہے جب اسلام دنیا میں سب سے بڑی قوت بن کر ابھرے گااور باطل نظام و ڈھانچے ختم ہو جائیں گے۔انہوں نے کہاکہ دشمن قوتیں اسلام اور پاکستان کیخلاف بے بنیاد پروپیگنڈہ کر رہی ہیں۔ جن ملکوں میں اسلام کی دعوت مضبوط ہو رہی ہے اور مسلمان قوت پکڑ رہے ہیںا نہیں خاص طور پر عدم استحکام سے دوچار کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔دشمنان اسلام نے ہمیشہ مسلمانوں کو باہم لڑا کر انہیں کمزور کرنے اور نقصان پہنچانے کی سازشیں کی ہیں۔ ہمیں دشمن کی سازشوں سے باخبر رہنے اورمتحد وبیدار رہنے کی ضرورت ہے۔
تحریک حرمت رسول ﷺ کے چیئر مین مولانا امیر حمزہ نے کہاہے کہ صلیبی و یہودی شان رسالت میں (نعوذ باللہ)گستاخیاں کر کے مسلمانوں کو اس کاعادی بنانا چاہتے ہیں۔دنیا میں اسلام کی پھیلتی ہوئی دعوت روکنے کی سازشیں کامیاب نہیں ہوں گی۔ مسلم حکمرانوں کواپنے سفارتخانوں کو متحرک کرنا چاہیے اور عالمی سطح پر توہین انبیاءکی بے حرمتی کی سزا کا قانون پاس کروانے کی کوشش کرنی چاہیے۔مسلمان تحفظ حرمت رسول ﷺ کیلئے اپنا تن من دھن قربان کرناایمان کا حصہ سمجھتے ہیں۔اپنے بیان میں انہوںنے کہاکہ گستاخانہ خاکوں کے معاملہ پر او آئی سی کو بھی جرا ¿تمندانہ کردار ادا کرنا چاہیے۔ مسلم حکمران بیرونی قوتوں کے سامنے ہاتھ پھیلانا اور ہر مسئلہ پر سر تسلیم خم کرنے کا رویہ ترک کر دیں قرآن و سنت کی رہنمائی میں پالیسیاں ترتیب دی جائیں اگر مسلمان یہ چاہتے ہیںکہ ان کے ملک، عزتیں و عصمتیں اور آزادیاں محفوظ ہوں تو انہیں چاہیے کہ وہ قرآن پاک اور نبی اکرم ﷺ کی حرمت کے تحفظ کیلئے بھرپور کردار ادا کریں وہ ایسا کریں گے تو اللہ ان پر آسمانوں سے رحمتیں و برکتیں نازل کرے گا ۔انہوںنے کہاکہ صلیبی و یہودی جس تحریر و تقریر کو آزادی اظہار رائے کا نام دیتے ہیں وہ دنیا کی سب سے بڑی دہشت گردی ہے۔ مسلمان اسلام ، قرآن اور نبی اکرم ﷺ کی حرمت کے دفاع کیلئے متحد و بیدار ہو جائیں۔ صلیبیوں و یہودیوں کی گستاخیوں پر جس کسی کی غیرت بیدارنہیں ہوتی اسے اپنے ایمان کی فکر کرنی چاہیے مسلم حکمران گستاخ ملکوں سے ہر قسم کے معاہدے و تعلقات ختم کریں۔ شان رسالت ﷺ میں گستاخیاں کرنے والوں سے دوستیاں لگانے والے اللہ کی پکڑ سے ڈریں اللہ تعالیٰ کو غیرت و حمیت سے عاری لوگ پسند نہیں ہیں۔مولانا امیر حمزہ نے کہاکہ مغربی ممالک میں غیر مسلم قرآن پاک اور سیرت رسول ﷺ کا مطالعہ کر کے بڑی تیز ی سے مسلمان ہو رہے ہیں ۔2008ءمیں ویٹی کن سے جاری ہونیوالی رپورٹ کے مطابق دنیا میں عیسائیوں کی تعداد سب سے زیادہ تھی لیکن اب صورتحال یہ ہے کہ مسلمانوں کی تعداد عیسائیوں سے بڑھ چکی ہے اور اس میں دن بدن اضافہ ہو رہا ہے۔ انہوںنے کہا کہ صلیبی و یہودی مسلمانوں کے مقابلہ میں شکست سے بوکھلا کرشان رسالت میں گستاخیوں کا ارتکاب کر رہے ہیں یہ وقت مسلمانوں کو متحد و بیدار کرنے، انہیں اہل کفر کی سازشوں سے آگاہ کرنے اور غیرت و حمیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے زبردست تحریکیں بپا کرنے کا ہے۔شان رسالت میں گستاخیاں روکنے کیلئے مسلم حکمرانوں کو قرآن سے رہنمائی لیکر لائحہ متفقہ عمل ترتیب دینا چاہیے۔

About Editor

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*