Breaking News
Home / خبریں / پاکستان / ممتاز قادری کی پھانسی اور تحفظ نسواں ایکٹ کی منظوری کیخلاف یوم احتجاج
ممتاز قادری کی پھانسی اور تحفظ نسواں ایکٹ کی منظوری کیخلاف یوم احتجاج

ممتاز قادری کی پھانسی اور تحفظ نسواں ایکٹ کی منظوری کیخلاف یوم احتجاج

لاہور(پاک میڈیا اپ ڈیٹس) 4مارچ 2016ئ۔جماعةالدعوة پاکستان کی طرف سے ممتاز قادری کی پھانسی اور تحفظ نسواں ایکٹ کی منظوری کیخلاف یوم احتجاج منایا گیا۔ علماءکرام اور دینی جماعتوں کے قائدین نے ملک بھر کی مساجد میں خطبات جمعہ میں ان مسائل کو موضوع بنایا اور ممتاز قادری کی پھانسی اور نسواں ایکٹ کی مذمت کی گئی۔مختلف شہروںمیں مساجد کے باہر اور دیگر مقامات پر مظاہرے بھی کئے گئے جن میں تمام مکاتب فکر اور شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔ جماعةالدعوة کے سربراہ پروفیسر حافظ محمد سعید، حافظ عبدالرحمن مکی، مولانا امیر حمزہ ، حافظ عبدالغفارروپڑی ودیگر نے کہا ہے کہ امریکہ و یورپ کی خوشنودی کیلئے ممتاز قادری کی پھانسی جیسے اقدامات کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔امریکہ سے نام نہاد سٹریٹیجک مذاکرات کی کامیابی کیلئے ممتا ز قادری کو پھانسی اور تحفظ نسواںایکٹ منظور کر کے امریکیوں کو تحفہ دیا گیا۔دینی و سیاسی جماعتوں سمیت پوری قوم ممتاز قادری کی پھانسی پر سراپا احتجاج ہے۔ حکومت کی طرف سے ملک میں لبرل ازم کے ایجنڈے کو پروان چڑھانے کی کوششیں قوم کامیاب نہیں ہونے دے گی۔ امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے جامع مسجد القادسیہ میںہزاروں افراد کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ممتاز قادری کی پھانسی اور نسواں ایکٹ کی منظوری پر سیاسی جماعتوں کو خاموش نہیں رہنا چاہیے۔ حکومت کی طرف سے سٹریٹیجک مذاکرات کی کامیابی کیلئے امریکہ کو دو تحفے دیے گئے‘ پہلے پنجاب اسمبلی سے تحفظ نسواں ایکٹ منظور کیا گیا اور پھر ممتاز قادری کو پھانسی دیکر انہیں خوش کرنے کی کوشش کی گئی۔حکمران سمجھتے ہیں کہ انڈیا کے امریکہ سے تعلقات بہت اچھے ہو گئے ہیں اس لئے انہیں بھی اپنے تعلقات کو مضبوط بنانا چاہیے۔ یہ سوچ درست نہیں ہے۔پاکستان اور سعودی عرب سمیت تمام مسلم ملکوںکو متحد ہو کر اپنے ملکوں کو درپیش مسائل کے حل کی خاطر سوچنا چاہیے اور اپنی کرنسی اور مشترکہ دفاعی نظام تشکیل دینا چاہیے۔ انہوںنے کہاکہ کلمہ طیبہ کی بنیاد پر حاصل کئے گئے ملک کو لبرل اور سیکولر بنانے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔مغرب کی خوشنودی کیلئے ایسے اقدامات کو درست قرار نہیں دیا جاسکتا۔ حکومت کی طرف سے مسئلہ کی حساسیت کو پیش نظر رکھنے کی بجائے جس طرح بغیر سوچے سمجھے انداز میں ممتاز قادری کو پھانسی دی گئی ہے اس عمل کی کسی صورت حمایت نہیں کی جاسکتی۔ علماءکرام اورتمام دینی و سیاسی جماعتوں کے قائدین کو باہم مل بیٹھ کر مشترکہ لائحہ عمل ترتیب دینا چاہیے اور حکومت پر دباﺅ بڑھانا چاہیے کہ وہ اپنی سمت درست رکھے اور ایسے اقدامات نہ اٹھائے جائیں جن سے ملک و ملت کے استحکام کو نقصان پہنچتا ہو۔ حافظ محمد سعیدنے کہاکہ اہل اقتدار مغرب کی تقلید میں نسواں ایکٹ جیسے قانون منظور کر رہے ہیں لیکن وہ یہ نہیں دیکھتے کہ عورت کو سب سے زیادہ حقوق اسلام نے دیے ہیں ‘جن حقوق کا یہ رونا رو رہے ہیں ان کی وجہ سے مغربی ملکوں کے معاشرے جانوروں کے معاشرے بن چکے ہیں اور وہاں کی عورتیں مسلمانوں کے خاندانی نظام سے متاثر ہو کر سب سے زیادہ اسلام قبول کر رہی ہیں۔نظریہ پاکستان رابطہ کونسل اور جماعةالدعوة کے مرکزی رہنما پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی نے آئی ایٹ مرکز اسلام آباد میں ہزاروں افراد کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ بیرونی قوتوں کو خوش کرنے کیلئے ممتاز قادری کو پھانسی دی گئی۔ملک اس وقت پہلے ہی سخت مشکلات سے دوچار ہے۔دشمنان اسلام وطن عزیزپاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کی منظم سازشیں کر رہی ہیں۔ ان حالات میں حکومت کی طرف سے ممتاز قادر ی کو پھانسی دیکر ملک میںایک نیا مسئلہ کھڑاکر دیا گیا ہے۔ تحریک حرمت رسول ﷺ کے چیئرمین مولانا امیر حمزہ نے جامع مسجد محمدی رسول پارک سمن آباد میں خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ممتاز قادری کی پھانسی اور تحفظ نسواں ایکٹ کی منظوری جیسے اقدامات کر کے امریکہ و یورپ کو خوش کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔ ایسے اقدامات کو کسی طور درست قرار نہیں دیا جاسکتا۔ جماعةالدعوة کے رہنماﺅں پروفیسر ظفر اقبال نے ملتان، مولانا سیف اللہ خالد نے خانیوال، مفتی مبشر احمد ربانی نے سبزہ زار لاہور، قاری یعقوب شیخ نے قینچی امرسدھو لاہور،حافظ عبدالغفار المدنی نے گھوڑے شاہ لاہور، تحریک تحفظ قبلہ اول کے کنوینر مولانا شمشاد احمد سلفی نے جھنگ، مفتی عبدالرحمن عابداور انجینئر نوید قمر نے فیصل آباد، مولانا نصر جاوید نے مانسہرہ، الشیخ عبدالطیف نے بہاولپور، مفتی محمد سعید نے گوجرانوالہ، حافظ طلحہ سعید، مولانا طاہر طیب بھٹوی نے لاہور،اعجاز احمد تنویر، خالد سیف الاسلام نے گوجرانوالہ، حافظ محمد مسعودنے جامع مسجد طیبہ لاہور، مولانا عبدالعزیز المدنی نے چونیاں،مولانا غلام قادر سبحانی نے بورے والا، مولانا احمد سعید ملتانی نے مرکز مدینہ لاہور، علی عمران شاہین،ننکانہ، حافظ عبدالغفار بہاولپوری،ملتان،مولانا احسان الحق شہباز،قلعہ دیدار سنگھ، مولانا یوسف ربانی،سرگودھا، مولانا سیف اللہ ربانی،ٹوبہ ٹیک سنگھ اورمولانا ریاض الہیٰ ظہیرنے فیصل آبادمیں اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حکومت کی طرف سے ملک میں لبرل ازم کے ایجنڈے کو پروان چڑھانے کی کوششیں افسوسناک ہیں۔ ممتاز قادری کو پھانسی دیناقابل مذمت فعل ہے۔

About Editor

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*