Breaking News
Home / خبریں / پاکستان / حکومت آئی ایم ایف سے قرضے اور سودی قسطیں لینا بند کرے۔ پروفیسر حافظ محمد سعید
حکومت آئی ایم ایف سے قرضے اور سودی قسطیں لینا بند کرے۔ پروفیسر حافظ محمد سعید

حکومت آئی ایم ایف سے قرضے اور سودی قسطیں لینا بند کرے۔ پروفیسر حافظ محمد سعید

امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ دنیا میں امن و سلامتی کا قیام صرف اسلامی تعلیمات پر عمل سے ہی ممکن ہے۔ نوجوان نسل کی دینی بنیادوں پر ذہن سازی کی جائے۔ کلمہ طیبہ کی بنیاد پر حاصل کئے گئے ملک کی حفاظت ہم سب پر فرض ہے۔فرقہ وارانہ قتل و غارت گری اورفتنہ تکفیر کا خاتمہ سیرت رسول ﷺپر عمل کر کے ہی کیا جاسکتا ہے۔حکومت آئی ایم ایف سے قرضے اور سودی قسطیں لینا بند کرے۔بیرونی قوتوں کے سامنے ہاتھ پھیلانے کی بجائے اپنے قدموں پر کھڑے ہوں اور قومی مفادات کو مدنظر رکھ کر پالیسیاں ترتیب دی جائیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکز اقصیٰ گوجرانوالہ میں جماعة الدعوة گوجرانوالہ کے زیر اہتمام کارکنان کی تربیتی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تربیتی نشست میں گوجرانوالہ و گردونواح سے کثیر تعداد میں کارکنان نے شرکت کی۔اس موقع پر جماعة الدعوة کے مرکزی رہنما مولانا سیف اللہ خالد،جماعة الدعوة گوجرانوالہ کے مسﺅل مولانا رمضان منظور ودیگرنے بھی خطاب کیا۔حافظ محمد سعید نے کہا کہ پاکستان لاالہ الا اللہ کا ملک ہے۔ قیام پاکستان کے وقت سارے مسلمان اسی بات پر اکھٹے ہوئے تھے اور اسی بات پر متفق تھے کہ ہم نے انگریزوں کی غلامی کو قبول نہیں کرنا اور نہ ہی ہندو ¿وں کے ساتھ رہنا ہے بلکہ الگ ایک اسلامی ریاست کا قیام کرنا ہے۔ اگر ملک کیخلا ف سازشوں کو ناکام بناناہے تو ایک مرتبہ پھر اسی بنیاد پر اکھٹے ہونا پڑے گا۔ پاکستان عالم اسلام کا دفاعی مرکز ہے۔ اسی لئے پاکستان کے خلاف پورا عالم کفر اکٹھا ہوکر سازشیں کررہا ہے۔ ہمیں ان حالات میں مضبوطی کے ساتھ اپنے قدموں پر کھڑا ہونا ہو گا۔ انہوں نے کہ پاکستان میں ہونے والی قتل و غارت گری ، دہشت گردی اور تخریب کاری میںبیرونی قوتوں کی ایجنسیاںملوث ہیں۔جب حکومت یہ تسلیم کرتی ہے کہ انڈیا دہشت گردوں کو تربیت دیکر پاکستان داخل کر رہا ہے۔بم دھماکوں و تخریب کاری کیلئے بے پناہ وسائل خرچ کئے جارہے ہیں اوران کے پاس انڈیا کی دہشت گردی کے واضح ثبوت موجود ہیں تو پھر وہ اقوام متحدہ اور دیگر عالمی فورمز پر اس مسئلہ کو کیوںنہیں اٹھاتی؟ اور بھارتی دہشت گردی کو دنیا کے سامنے بے نقاب کیوں نہیں کیاجاتا؟ انہوںنے کہاکہ صلیبیوں و یہودیوں کو اس بات سے کوئی سروکار نہیں کہ دھماکے کرنے والوں کے خلاف کیا اقدامات کئے جاتے ہیں؟ان کی کوشش یہ ہے کہ پاکستان پر دباﺅ بڑھا کرمحب وطن اور اسلام پسندوں کے خلاف اقدامات کئے جائیں۔حکومت بھی سمجھتی ہے کہ ہم نے آئی ایم سے قرضے اور سودی قسطیں لینی ہیں‘ اس کے بغیر بجٹ بنانا مشکل ہے۔یہ سوچ درست نہیں ہے۔ جس کلمہ طیبہ کی بنیاد پر یہ ملک حاصل کیا گیا اس کو صحیح معنوںمیں ماننے والے کبھی دشمنان اسلام کی غلامی اختیار نہیں کر سکتے ۔ یہ ڈرنے اور جھکنے کا وقت نہیں ہے۔ مسلم حکمران اس بات کا عہد کریں کہ وہ بھوکے رہ لیں گے مگرصلیبیوں و یہودیوں کی غلامی برداشت نہیں کریں گے اور سیرت رسول ﷺ پر عملدآمد کرتے ہوئے پالیسیاں ترتیب دیں گے۔اسی سے اللہ تعالیٰ ان شاءاللہ آسمانوں سے رحمتیں و برکتیں نازل کرے گا ۔حافظ محمد سعید نے کہاکہ مسلمانوں کے پاس قرآن پاک اور سیرت رسول ﷺ کی صورت میں مکمل رہنمائی موجود ہے انہیں صلیبیوں ویہودیوں سے متاثر نہیں ہونا چاہیے۔فرقہ واریت میں تشدد، قتل و غارت گری اور اخلاقی انحطاط سے بچا جاسکتا ہے لیکن افسوس کہ مسلم حکمرانوں کی جانب سے وہ راستہ اختیار ہی نہیں کیاجاتا جو انہیں کرنا چاہیے۔ پوری امت فتنوں کا شکار ہو رہی ہے۔ جب تک غلامی کی اس سوچ سے نکلا نہیں جاتا اور اپنی پالیسیوں کی اصلاح نہیں کی جاتی کامیابی ممکن نہیں ہے۔

About Editor

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*