Breaking News
Home / خبریں / پاکستان / پاکستان کے ایٹمی پروگرام کو نقصان پہنچانے کیلئے ہندوستانی ایئرپورٹس پر میزائل نصب کئے جارہے ہیں۔حافظ محمد سعید
پاکستان کے ایٹمی پروگرام کو نقصان پہنچانے کیلئے ہندوستانی ایئرپورٹس پر میزائل نصب کئے جارہے ہیں۔حافظ محمد سعید

پاکستان کے ایٹمی پروگرام کو نقصان پہنچانے کیلئے ہندوستانی ایئرپورٹس پر میزائل نصب کئے جارہے ہیں۔حافظ محمد سعید

امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ پاکستان کے ایٹمی پروگرام کو نقصان پہنچانے کیلئے ہندوستانی ایئرپورٹس پر میزائل نصب کئے جارہے ہیں۔ امریکی ڈرون طیارے بھی وہاں موجود ہیں اوراسرائیلیوں کوبھارتی ایئرپورٹس پر لا کر بٹھایاجارہا ہے۔دفاع پاکستان کونسل دشمن کی سازشیں ناکام بنانے کیلئے وسیع تر اتحاد قائم کرے گی اور ملک گیر تحریک کے ذریعہ قوم کو دشمن کے مذمو م عزائم سے آگاہ کیا جائے گا۔ لاہور میں فلاح انسانیت فاﺅنڈیشن کی ایمبولینسوں کی تعداد 70ہو گئی۔ تھرپارکر سندھ اور بلوچستان سمیت پورے ملک میں ریلیف سرگرمیاں جاری رکھیں گے۔ ضلع و تحصیل سطح پر ایمبولینسوں کا نیٹ ورک پھیلا رہے ہیں۔ ان خیالا ت کا اظہار انہوںنے جامع مسجد القادسیہ میں خطبہ جمعہ اور بعد ازاں چوبرجی چوک میں فلاح انسانیت فاﺅنڈیشن کی 10نئی ایمبولینس گاڑیوں کی افتتاحی تقریب کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر حافظ محمد سعید نے ایف آئی ایف کے ذمہ داران کو ایمبولینس گاڑیوں کی چابیاں دیں ۔ تقریب سے جماعةالدعوة لاہور کے مسﺅل ابوالہاشم ربانی نے بھی خطاب کیا۔ جماعةالدعوة کے سربراہ حافظ محمد سعید نے اپنے خطاب میں کہاکہ امریکہ پاکستان دشمنی میں انڈیا سے بھی آگے نکل گیا ہے۔ بلوچستان میں ڈرون حملہ ایک ریہرسل اور پاکستان کا ردعمل جاننے کیلئے تھا۔ ان کا اصل ٹارگٹ پاکستان کا ایٹمی پروگرام ہے۔وطن عزیز پاکستان اس وقت سخت خطرات سے دوچار ہے اور امریکہ، بھارت اور اسرائیل مل کر اس کے ایٹمی پروگرام کو نقصانات سے دوچار کرنے کیلئے خوفناک سازشیں کر رہے ہیں۔ان حالات میں ہماری ذمہ داری ہے کہ پورے پاکستان میں لوگوں کو خطرات سے نمٹنے کیلئے ذہنی طور پر تیار کریں۔ جب قوم بیدار ہوتی ہے تو پھر ان پر حملہ کرنا مشکل ہو تا ہے۔ ہم نے لوگوں کو جگانا اور دشمنوں کی سازشوں سے آگاہ کرنا ہے۔ انہوںنے کہاکہ ڈرون طیارے امریکی استعمال ہو رہے ہیں اور سازشیں یہودی کر رہے ہیں۔ امریکیوں اور اسرائیلیوں کو منظم منصوبہ بندی کے تحت انڈیا میں جگہ دی گئی ہے۔ بیرونی سازشوں کے توڑ کیلئے ملک میں وسیع پیمانے پر اتحادویکجہتی کا ماحول پیدا کرنے کی ضرورت ہے۔ ہمیں کسی کے سامنے جھکنا نہیں بلکہ پاکستان کو مضبوط بنانا ہے تا کہ یہ ملک دوسروں کا دست نگر بن کر نہ رہے۔ حافظ محمد سعید نے کہاکہ امریکہ کے موجودہ حکمرانوں کا اقتدار ختم ہو رہا ہے۔ اس لئے وہ جاتے ہوئے پاکستان کو نقصان پہنچانے کی کوئی مذموم حرکت کرنا چاہتے ہیں لیکن اللہ تعالیٰ نے جس طرح پہلے دشمن کی سازشیں ناکام کیں اب بھی ان شاءاللہ اسی طرح انہیں ناکامیوں سے دوچار کرے گا۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ قوم دشمن کے مقابلہ میں سیسہ پلائی دیوار بن کر کھڑی ہو جائے۔ جب قوم متحد و بیدار اور ڈٹ کر کھڑی ہو گی تو دشمنان اسلام میں بھی جرا ¿ت نہیں ہو گی کہ وہ پاکستان کی جانب میلی نگاہ ڈال سکے۔ انہوںنے کہاکہ انگریز نے خطہ میں حکمرانی کیلئے مسلمانوں کو باہم لڑایا اور مذہب کی بنیاد پر فرقہ واریت کو پروان چڑھایا گیا۔اسی طرح دوسراکام سیاست کو دین سے الگ کرنے کا کیا گیا۔ جماعةالدعوة مسلمانوں کو متحد کرنے اورفرقہ واریت میں تشددختم کرنے کیلئے دعوت و اصلاح کا کام کر رہی ہے۔ اس کیلئے مسلسل ذہن سازی کی ضرورت ہے تاکہ دنیا کو امن کا گہوارہ بنایا جاسکے۔ مسلم حکمران دہشت گردی کے خاتمہ کیلئے امریکہ و یورپ کی طرف دیکھنا چھوڑ دیں۔ وہ جن سے امیدیں وابستہ کرتے ہیں وہی تو درحقیقت دنیا میں دہشت گردی پروان چڑھارہے ہیں۔ مغرب کے سرمایہ دارانہ اور استحصالی نظاموں سے مسلمانوں کو حقوق نہیں ملیں گے۔ دریں اثناءجماعةالدعوة لاہور کے زیر اہتمام نماز جمعہ کے بعد چوبرجی چوک میں نئی ایمبولینس گاڑیوں کی افتتاحی تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ اس موقع پر 10نئی ایمبولینس گاڑیوں کی چابیاں ایف آئی ایف کے ذمہ داران کے حوالے کی گئیں۔اس موقع پر حافظ محمد سعید نے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ ملک بھر کے تمام اضلاع میں تحصیل کی سطح پر ایمبولینسوں کا نیٹ ورک پھیلا رہے ہیں۔ مختلف شہروں میں واٹر ریسکیو سنٹر قائم اور ہسپتال بنائے جارہے ہیں۔ جماعةالدعوة کے رضاکار بلا تفریق رنگ و نسل دکھی انسانیت کی خدمت کر رہے ہیں۔ افتتاحی تقریب کے دوران جماعةالدعوة لاہور کے مسﺅل ابوالہاشم ربانی نے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ لاہور میں ایمبولینس گاڑیوں کی تعداد 70ہو گئی ہے اوراس تعداد کو مزید بڑھایا جارہا ہے۔

About Editor

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*