Breaking News
Home / خبریں / صحت / تلی ہوئی اشیا ذیابیطیس كے مریضوں كے لیے انتہائی نقصان دہ ہوسكتی ہیں
تلی ہوئی اشیا ذیابیطیس كے مریضوں كے لیے انتہائی نقصان دہ ہوسكتی ہیں

تلی ہوئی اشیا ذیابیطیس كے مریضوں كے لیے انتہائی نقصان دہ ہوسكتی ہیں

http://PakMediaUpdates.Com/

کراچی: ماہر طب کا کہنا ہے کہ رمضان المبارک میں ذیابیطیس سے متاثرہ حاملہ خواتین روزہ ركھنے سے اجتناب كریں جب كہ ڈائیلسس یا گردے ناكارہ ہونے والے مریض روزہ ركھ کر اپنی جان خطرے میں نہ ڈالیں۔

ذیابیطس کے معروف معالج پروفیسر زمان شیخ نے ایکسپریس سے بات کرتے ہوئے کہا کہ رمضان المبارک میں ذیابیطیس سے متاثرہ حاملہ خواتین روزہ ركھنے سے اجتناب كریں جب كہ ڈائیلسس یا گردے ناكارہ ہونے والے مریض روزہ نہیں ركھ سكتے ہیں ،حال ہی میں دل كی سرجری (ہارٹ اٹیك) والے مریض بھی ہائی رسک میں شامل ہوتے ہیں، روزے كے دروان شوگركوچیک كیا جاسكتا ہے اور ذیابیطیس كے وہ مریض جوٹیبلیٹ سے اپنی شوگركنٹرول كرتے ہیں روزے ركھ سكتے ہیں تاہم انہیں دواؤں كے اوقات میں تبدیلی كرنا ہوگی، انسولین لگانے والے مریض اپنے معالجین سے مشورے اورانسولین كے اوقات اور انسولین یونٹ میں تبدیلی كركے روزہ ركھ سكتے ہیں۔

پروفیسر زمان شیخ نے کہا کہ روزے میں ذیابیطس كے مریضوں كو 3 گروپوں میں تقسیم كیا گیا ہے، طبی نكتہ نگاہ سے ایسی خواتین جو ذیابیطس كا شكار اور حاملہ ہیں وہ روزہ نہیں ركھ سكتیں جب كہ  ایسے ذیابیطیس كے مریض كو اپنی شوگر ٹیبیلیٹ سے كنٹرول كرتے ہیں انہیں روزے ركھنا چاہئیں اور انسولین لگانے والے مریض بھی اپنے معالج سے مشورہ كركے روزے ركھ سكتے ہیں تاہم حال ہی میں دل كی سرجری كرانے والے مریض روزے نہیں ركھ سكتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ روزے كے دوران خون میں شوگركی سطح 60 سے كم ہوجائے توروزہ توڑ لینا چاہیے، اگر صبح كے وقت خون میں شوگركی سطح 70 سے كم ہوجائے تو بھی روزہ توڑ دینا چاہیے جب كہ روزے كے دوران شوگر ساڑھے 300 سے زائد جائے اور علامات بھی ظاہر ہوجائیں تو بھی روزہ توڑ دینا بہتر ہے۔

معروف معالج كا كہنا تھا كہ جو مریض ڈائیٹنگ پر روزے كوكنٹرول كررہے ہیں انہیں روزے ركھنا چاہئے، شوگر كے مریضوں كو افطار اورسحری میں تلی ہوئی اشیاء كم سے كم استعمال كرنا چاہیے جب كہ روزہ افطار میں سافٹ ڈرنكس نقصان دہ ہے، شوگر كے مریضوں كوافطاركے وقت سافٹ ڈرنكس كااستعمال انتہائی نقصان دہ ہوتا ہے، اس كی جگہ لسی یا لیموں پانی استعمال كرسكتے ہیں، افطار میں شوگر مریض فروٹ چاٹ كا استعمال بھی محتاط اندازسے كرسكتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بیسن كی اشیا کا بھی كم استعمال كی جائے جب کہ بازار میں غیر صحت مندانہ ماحول میں تیار كی جانے والی تلی ہوئی اشیا ذیابیطیس كے مریضوں كے لیے انتہائی نقصان دہ ہوسكتی ہیں۔ ان كا كہنا تھا كہ ذیابیطیس كے مریض افطار وسحر میں احتیاط سے كام كرلیں توروزے ركھے جاسكتے ہیں۔

About Editor

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*