Breaking News
Home / News / Pak India / جماعةالدعوة پاکستان نے بھارتی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی پاکستان آمد کیخلاف3اگست کو ملک گیر یوم احتجاج کا اعلان کر دیا
جماعةالدعوة پاکستان نے بھارتی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی پاکستان آمد کیخلاف3اگست کو ملک گیر یوم احتجاج کا اعلان کر دیا

جماعةالدعوة پاکستان نے بھارتی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی پاکستان آمد کیخلاف3اگست کو ملک گیر یوم احتجاج کا اعلان کر دیا

جماعةالدعوة پاکستان نے بھارتی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی پاکستان آمد کیخلاف3اگست کو ملک گیر یوم احتجاج کا اعلان کر دیا۔ لاہور، اسلام آباد، کراچی، ملتان، کوئٹہ، پشاور اور مظفر آباد سمیت چاروں صوبوں و آزاد کشمیر میں ا حتجاجی مظاہرے کئے جائیں گے اور ریلیاں نکالی جائیں گی۔ مختلف شہروں و علاقوںمیں ہونےو الے احتجاجی مظاہروں اور ریلیوں میں ملک بھر کی مذہبی، سیاسی و کشمیری قیادت خطاب کرے گی۔جماعةالدعوة کے سربراہ حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ بھارت سرکار مہلک ہتھیاروں کے ذریعہ کشمیریوں کی نسل کشی کر رہی ہے اور پاکستانی حکمران راجناتھ جیسے کشمیریوں کے قاتل کے استقبال کی تیاریاں کر رہے ہیں۔ ہندوستانی وزیر داخلہ کی پاکستان آمد کیخلاف پاکستانی قوم شدید احتجاج کرے گی۔جماعةالدعوة کی طر ف سے مظلوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے 3اگست کو ملک گیر یوم احتجاج کا اعلان کیا گیا ہے تاکہ دنیا کو پیغام دیا جاسکے کہ حکمرانوں کی مجبوریاں ہو سکتی ہیں لیکن پاکستانی عوام کی کوئی مجبوری نہیں ہے اور وہ ظلم و بربریت کا شکار کشمیریوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ بی جے پی حکومت نریندر مودی کی سرپرستی میں پیلٹ گن اور پیپر گیس جیسے مہلک ہتھیاروں سے کشمیریوں کی زندگیاں تباہ کر رہی ہے۔ سینکڑوں کشمیریوں کی بینائی ختم ہو چکی ۔ معصوم بچے، عورتیں اور نوجوان ہسپتالوں میں علاج معالجہ کے حوالہ سے سخت مشکلات کا شکار ہیں۔ بھارتی فوج ہسپتالوں میں گھس کر مریضوں پر تشدد اور ان کے اہل خانہ کو ہراساںکر رہی ہے۔ کشمیر میں غذائی قلت بھی شدید ہو چکی ۔ نہتے کشمیری بچوں کیلئے دودھ کا ایک ڈبہ حاصل کرنے کیلئے کرفیو کی خلاف ورزیاں کر رہے اور اپنے سینوں پر گولیاں کھا رہے ہیں۔ ان حالات میں ہزاروں مسلمانوں کے قاتل راجناتھ سنگھ کی پاکستان آمد کا سن کر پوری کشمیری وپاکستانی قوم میں سخت بے چینی پائی جاتی ہے۔ حافظ محمد سعید نے کہا کہ ہندو انتہاپسند تنظیم بی جے پی کے لیڈراوربھارتی وزیر داخلہ کے ہاتھ ہزاروں کشمیری مسلمانوں کے خون سے رنگے ہوئے ہیں۔کشمیریوں کے اصل وکیل پاکستان کی جانب سے راجناتھ سنگھ کو پروٹوکول دینا اور استقبال کرنا کشمیریوں کے زخموں پر نمک چھڑکنے کے مترادف ہے۔ سارک تنظیم بھارت کے توسیع پسندانہ عزائم کے خلاف بنائی گئی تھی لیکن افسوس اس بات کا ہے کہ آج مودی سرکار کی دہشت گردی روکنے کیلئے اس تنظیم کا کوئی کردار نظر نہیں آتا بلکہ سارک ممالک کے اس فورم پر بھارت سرگرم کردار ادا کرتا دکھائی دیتا ہے۔ انہوںنے کہاکہ راجناتھ سنگھ کے مقبوضہ کشمیر کادورہ کرنے پر کشمیریوںنے اس سے ملنے سے انکار کر دیا۔ پاکستانی حکمرانوں کو بھی چاہیے تھا کہ وہ اس سلسلہ میں کشمیریوں کے جذبات کو مدنظر رکھتے اورانڈیا پر واضح کیا جاتا کہ ایسے حالات میں کہ جب بھارتی فوج کشمیریوں کا قتل عام کر رہی ہے راجناتھ کے پاکستان آنے سے کشمیریوں و پاکستانی قوم کے جذبات بھڑکیں گے اور حکومت پاکستان مظلوم کشمیریوں کی قربانیاں نظر انداز کرتے ہوئے ان کے قاتلوں کا استقبال کرنے کیلئے تیار نہیں ہے۔ انہوںنے کہاکہ شہداءکا خون ہمیں پکار رہا ہے۔کشمیری مائیں ،بہنیں،بیٹیاںہمیں مدد کیلئے دہائیاںدے رہی ہیں۔ضرورت اس امر کی ہے کہ کشمیر کی موجودہ صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو نتیجہ خیز بنانے کیلئے بڑے فیصلے کئے جائیں۔

About Editor

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*