Breaking News
Home / خبریں / پاک انڈیا / محب وطن جماعت جماعة الدعوة پر پابندی کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا. آل پارٹیز کانفرنسز
محب وطن جماعت جماعة الدعوة پر پابندی کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا. آل پارٹیز کانفرنسز

محب وطن جماعت جماعة الدعوة پر پابندی کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا. آل پارٹیز کانفرنسز

    تحریک آزادی جموں کی تحت کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لئے آل پارٹیز کانفرنسز برائے کشمیر کا سلسلہ پیر کو بھی مختلف شہروں میں جاری رہا،جڑانوالہ،میر پور ،سکھر سمیت دیگر شہروں میں منعقدہ آل پارٹیز کانفرنسز میں مذہبی،سیاسی و سماجی تنظیموں،وکلاءاور تاجر رہنماﺅں نے شرکت کی۔تحریک آزادی جموں کشمیر،مسلم لیگ(ن)،پیپلز پارٹی،جماعت اسلامی،مرکزی جمعیت اہلحدیث،تحفظ ختم نبوت،فلاح انسانیت فاﺅنڈیشن،ملی یکجہتی کونل،واٹر موومنٹ پاکستان،جمعیت اہلحدیث،اخوت اسلامی پاکستان،آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس،جمعیت علماءاسلام (ف) ،جمعیت علماءاسلام(س)،جئے سندھ انقلابی محاذ،جمعیت علماءپاکستان و دیگرتنظیموں کے رہنماﺅںنے امریکہ کی جانب سے جماعة الدعوة پر پابندی کے مطالبے کی شدید مذمت کی اور کہا کہ محب وطن جماعت پر پابندی کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا۔حکومت امریکہ نہیںبلکہ پاکستانی قوم کی ڈکٹیشن پر فیصلہ کرے۔جڑانوالہ میں تحریک آزادی جموں کشمیر کے زیر اہتمام مقامی ہوٹل میں ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس سے تحریک آزادی جموں کشمیرکی آل پارٹیز کانفرنس کے دوران مرکزی رہنماتحریک آزادی جموں کشمیرو جماعة الدعوةفیصل آباد فیاض احمد،آفتاب اکبرصدر پاکستان مسلم لیگ ن،ملک ذیشان رہنما پاکستان پیپلزپارٹی،ڈاکٹر سعید امیر جماعت اسلامی جڑانوالہ،رائے مصطفی بابر چیئر مین بلدیہ ٹاون جڑانوالہ،حافظ احمدحمید اللہ رہنما مرکزی جمیعت اہلحدیث،حافظ سجاد امیر تحفظ ختم نبوت،ڈاکٹر ظفر اقبال چیئرمین فلاح انسانیت فاونڈیشن فیصل آباد،ابو بصیر احمدمرکزی رہنما ملی یکجہتی کونسل ،حافظ عبدالروف رہنما واٹر مومنٹ ،قاری خالدنائب صدر جمیعت اہلحدیث،سکندر حیات زکی ناظم اخوت اسلامی،غازی سلمان ور دیگر مذہبی و سیاسی جماعتوں ، وکلاءاورتاجر تنظیموں کے رہنماﺅں نے خطاب کیا۔ اس موقع پرکشمیر میں بھارتی مظالم کے حوالے سے ڈاکومنٹری بھی دکھائی گئی جس میں پیش کیے جانے والے درد ناک مناظر دیکھ کر شرکاءآبدیدہ ہوگئے۔ مقررین نے کہا کہ کشمیریوں کی نسل کشی کیلئے انڈیا کو بیرونی قوتوں کی سرپرستی حاصل ہے۔70سال کے ظلم و تشدد کے باوجود انڈیا کشمیریوں کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکا۔ وزیر اعظم نواز شریف سرکاری سطح پر 2017ءکو کشمیر کا سال قرار دیں۔ حکومت سے صرف تقریروں کی حد تک نہیں بلکہ عملی اقدام کی توقع رکھتے ہیں۔تمام مذہبی، سیاسی و کشمیری جماعتیں صرف پاکستان کے جھنڈے تلے متحد ہوکر کشمیر کے لیے آواز بلند کریں گی۔حکومت کی پہلی ترجیح تجارت نہیں کشمیرہونی چاہیے۔پارٹیوں سے بالا ترہو کرکشمیر کے حوالہ سے ذمہ داری ادا کریں۔میر پور میں ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس سے تحریک آزادی کشمیر کے مرکزی رہنما حافظ طلحہ سعید، مسلم لیگ (ن)کے مرکزی راہنما کرنل (ر) معروف،انجمن تاجران اتحاد گروپ کے صدر چوھدری محمود ،راجہ ظفر معروف مرکزی نائب صدر ال جموں و کشیر مسلم کانفرس،جماعت اسلامی کے ضلعی صد ر مولانا عتیق الرحمان ،الخدمت فاﺅڈیشن آزاد کشمیر کے چیئر مین ڈاکٹر ریاض احمد،زونل مسﺅل تحریک آزادی کشمیر عبدالحمےد،چیئرمین سنی اتحاد کونسل مفتی وسیم رضا ، تحریک آزادی کشمیرکے ضلعی صدر سجاد احمد نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیری قربانیوںاور پاکستان سے محبت کی عظیم داستانیں رقم کر رہے ہیں ۔کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے ۔کشمیریوں کو بھارت کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جا سکتا۔دشمنوں کے ہمنوا بننے والے اپنوںپر پابندیاں لگانے والے کشمیری شہداءکے خون سے غداری کے مرتکب ہونگے ۔بھارت ظالم جو فطرتاََبزدل ہے ، کشمیریوں کے وکیل پاکستان کی نسبت سفارتی لابنگ اور پراپیگنڈہ کے محاذپر عالمی دنیا کو دوفریقی معاملہ قرار دلانے میں کسی قدر کامیاب مگر کشمیر اور اندرونی طورپر بھارت ناکام نظر آتا ہے ۔جماعت الدعو ہ جیسی مخلص اورمظلوم و مصیبت زدہ افراد کی مدد گارجماعت پر پابندی ملکی مفاد اور وقار کے خلاف ہو گی جس کا بھر پور دفاع کریں گے ۔تحریک جموں کشمیر کے تحت پریس کلب سکھر میں منعقد ہ آل پارٹیز کانفرنسز میں شامل شہربھر کی مختلف سیاسی ، دینی ، سماجی رہنماو ¿ں کے علاوہ شہر بھر کی تاجر تنظیموں کے رہنماو ¿ں نے کیا۔کانفرنس میں صوبائی مسو ¿ل جماعة الدعوة سندھ فیصل ندیم ،صوبائی ناظم تبلیغ مرکز ی جمعیت اہلحدیث سندھ عبدالرحمن ثاقب، رہنماجمعیت علماءپاکستان مشرف محمود قادری، رہنما جمیعت علماءاسلام (ف)مولا بخش مہر،رہنما جمعیت علماءاسلام (س) عبدالستار بروہی ،رہنماپاکستان مسلم لیگ ( ن)اسلام مغل،چیئرمین جئے سندھ انقلابی محاذ غازی خان سولنگی کے علاوہ شہر بھر کی سماجی و تاجر رتنظیموں کے رہنماو ¿ں نے شرکت کی۔ مقررین نے کہاکہ دنیا پر مسلط طاقتوں کے ہاتھ مسلمانوں کے خون میں رنگے ہوئے ہیں۔ مسلمانوں کے حقوق کی آواز بلند کرنے والوں کو دہشت گرد قرار دیاجاتا ہے۔اسلام کی بڑھتی ہوئی طاقت سے خوفزدہ یہ لوگ مسلمانوں کو مسائل میں الجھانا چاہتے ہیں۔کشمیر دنیا کامسئلہ قدیم ہے لیکن حقوق انسانی کی دعویدار اقوام متحدہ ناک پر جوں نہی رینگتی۔حقوق خود ارادیت کی قرار اقوام متحدہ کی بے حسی کا مزاق ا ڑا رہی ہے۔ ہمیں خود اس مسئلہ کے حل کے لئے سنجیدگی سے سوچنا ہوگا۔اس قومی مسئلہ پر پاکستانی بننے کی ضرورت ہے۔بیک ڈور ڈپلومیسی کے بجائے واضع پالیسی طے ہونی چاہیئے۔
 
 

About Editor

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*