Breaking News
Home / خبریں / پاکستان / سوشل میڈیا پر بڑھتی ہوئی گستاخیوں کیخلاف تحریک حرمت رسولﷺ اور دیگر مذہبی تنظیموں کی اپیل پرزبردست احتجاجی مظاہرے
سوشل میڈیا پر بڑھتی ہوئی گستاخیوں کیخلاف  تحریک حرمت رسولﷺ اور دیگر مذہبی تنظیموں کی اپیل پرزبردست احتجاجی مظاہرے

سوشل میڈیا پر بڑھتی ہوئی گستاخیوں کیخلاف تحریک حرمت رسولﷺ اور دیگر مذہبی تنظیموں کی اپیل پرزبردست احتجاجی مظاہرے

تحریک حرمت رسولﷺ، جماعةالدعوة اور دیگر مذہبی تنظیموں کی اپیل پر علماءکرام کی طرف سے ملک بھر کی مساجد میں تحفظ حرمت رسول ﷺ کے موضوع پر خطبات جمعہ کا اہتمام کیا گیا اور سوشل میڈیا پر بڑھتی ہوئی گستاخیوں کیخلاف بعض شہروں میں زبردست احتجاجی مظاہرے بھی کئے گئے جن میں ہزاروں شریک ہوئے۔ ملتان میں تحریک حرمت رسول ﷺاور جماعةالدعوة کے احتجاجی مظاہرہ میں شہریوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔شرکاءنے ہاتھوں میں کتبے اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر حرمت رسول ﷺ پر جان بھی قربان ہے‘ گستاخ بلاگرز کو گرفتار کر کے قرارواقعی سزادی جائے اور سائبر کرائم بل میں تمام انبیاءکی توہین کے حوالہ سے سخت سزا کی شق شامل کی جائے‘ جیسی تحریریں درج تھیں۔چاروں صوبوں و آزاد کشمیر کی مساجد میں خطبات جمعہ میں سوشل میڈیا پر گستاخیوں کیخلاف مذمتی قراردادیں بھی پاس کی گئیں۔اس دوران جسٹس شوکت عزیز صدیقی کو بھی خراج تحسین پیش کیا گیا۔ تحریک حرمت رسول ﷺ کے قائدین پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، مولانا امیر حمزہ، قاری یعقوب شیخ،حافظ عبدالغفارروپڑی، حافظ طلحہ سعید ودیگر نے واضح طور پر قرار دیا ہے کہ سوشل میڈیا پر گستاخیاں بیرونی قوتوں کی شہ پر کی جارہی ہیں اور گستاخ عناصر کی ڈوریں بیرون ممالک سے ہلائی جارہی ہیں۔ شان رسالت ﷺ میں گستاخیوں کی حالیہ لہر میں انڈیا بھی پیش پیش ہے۔ حکومت پاکستان بین الاقوامی سطح پر تمام انبیاءکی شان میں گستاخی کی سزا کا قانون پاس کروانے کیلئے عملی کردار ادا کرے۔جماعةالدعوة سیاسی امور کے سربراہ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی نے جامع مسجد قبا میں خطبہ جمعہ کے دوران کہاکہ دشمن قوتیں اسلام، قرآن اور نبی مکرم ﷺ کی شان اقدس میں گستاخیاں کر کے مسلمانوں کے دلوں سے غیرت ایمانی ختم کرنا چاہتی ہیں۔ سوشل میڈیا کو اس مقصد کیلئے خاص طور پر استعمال کیا جارہا ہے۔ علماءکرام اور دینی جماعتوں کے قائدین حکومت پر دباﺅ بڑھائیں کہ وہ سائبر کرائم پر کنٹرول پانے والے ادارے پی ٹی اے کو متحرک کرے تاکہ سوشل میڈیا پر سے گستاخانہ مواد مکمل طور پر ختم کیا جاسکے۔ انہوںنے کہاکہ گستاخ بلاگرز کو سخت سزائیں دی جائیں تو آئندہ کیلئے گستاخیوں کا سلسلہ رک سکتا ہے۔ تحریک حرمت رسول ﷺ کے کنوینر مولانا امیر حمزہ نے جامع مسجد ریاض الجنة ملتان روڈ میں نماز جمعہ کے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ گستاخ بلاگرز کو رہا کرنا انہیں شہ دینے کے مترادف ہے۔ انتہائی افسوسناک امر ہے کہ یہاں جو کوئی گستاخیاں کرتا ہے اسے ملک سے باہر بھجوادیا جاتا ہے ۔ ماضی میں بھی ایسے کئی واقعات ہوئے ہیں اور اب بھی ایک گستاخ بلاگرز کے ملک سے باہر جانے کی اطلاعات ہیں ۔ اگر یہ واقعی سچ ہے تویہ پوری پاکستانی قوم کیلئے انتہائی تشویشناک بات ہے۔ گستاخ بلاگرز کی گرفتاری پر جن لوگوں نے ان کے حق میں مہم چلائی انہیں اپنے ایمان کا جائزہ لینا چاہیے۔ اساتذہ جماعةالدعوة پاکستان کے مسﺅل حافظ طلحہ سعید نے جامع مسجد القادسیہ میں خطبہ جمعہ کے دوران کہاکہ تاریخ گواہ ہے کہ جب بھی اسلامی تعلیمات پر نظریاتی حملے ہوئے شان رسالت ﷺ میں گستاخیوں کا ارتکاب کیا گیا۔ کفار دعوتی، نظریاتی اور عسکری میدان میں مسلمانوں کا مقابلہ نہیں کر سکتے اور تمامتر وسائل کے باوجود شکست کھا جاتے ہیں جس پر وہ ایسی مذموم حرکتوں کا ارتکاب کرتے ہیں۔سوشل میڈیا پر گستاخانہ حملے مغربی ملکوں کی خوفناک سازش ہے جس میں ازلی دشمن بھارت بھی پیش پیش ہے۔ انہوںنے کہاکہ منظم منصوبہ بندی کے تحت ایسی گستاخیاں کر کے مسلمانوں کے جذبات مشتعل کرنے کی سازشیں کی جارہی ہیں۔ حکومت پاکستان کویہ سلسلہ روکنے کیلئے سخت اقدامات کرنے چاہئیں۔ تحریک حرمت رسول ﷺ اور جماعةالدعوة کی طرف سے ملتان کے رشید آباد علاقہ میں کئے گئے احتجاجی مظاہرہ میں شہریوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ اس موقع پر حرمت رسول ﷺ پر جان بھی قربان ہے‘ کے نعرے لگائے گئے اور گستاخ بلاگرز کو فی الفور گرفتار کر کے قرارواقعی سزا دینے کا مطالبہ کیا گیا۔ احتجاجی مظاہرہ سے جماعةالدعوة ملتان کے مسﺅل میاں سہیل و دیگر نے خطاب کیا۔ تحریک حرمت رسول ﷺ کے سیکرٹری جنرل قاری یعقوب شیخ نے نماز جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ دشمنان اسلام کی طرف سے منظم منصوبہ بندی کے تحت گستاخانہ مواد اپ لوڈ کیا جارہا ہے۔گستاخ بلاگرز کو رہا کرنا درست نہیں‘ حرمت رسول ﷺکا تحفظ ہر مسلمان کے ایمان کا حصہ ہے۔ شان رسالت ﷺ میں گستاخیوں پر کسی صورت خاموشی اختیار نہیں کی جاسکتی۔جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے انتہائی ایمان افروز کردارادا کیا ہے۔تحریک حرمت رسول ﷺ کے رہنماﺅں حافظ عبدالغفارروپڑی،مولانا سیف اللہ خالد، انجینئر نوید قمر، ابوالہاشم ربانی، مولانا غلام قادر سبحانی،مولانا بشیر احمد خاکی، ڈاکٹر مزمل اقبال ہاشمی، فیاض احمد، احسان اللہ، مولانا رمضان منظور، علی عمر ان شاہین و دیگر نے مختلف شہروں میں نماز جمعہ کے بڑے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ تحفظ حرمت رسول ﷺ کے مسئلہ پر ملک بھر کی تمام مذہبی، سیاسی و سماجی تنظیموں کو مل کر مضبوط حکمت عملی ترتیب دینی چاہیے۔اس وقت صورتحال یہ ہے کہ گستاخ بلاگرز کو رہا کر دیا گیا ہے اور حرمت رسول ﷺکا تحفظ کرنے والے حافظ محمد سعید جیسے لیڈروں کو نظربند کر دیا گیا ہے۔انہوں نے کہاکہ حکومت پاکستان پر فرض ہے کہ وہ تحفظ حرمت رسول ﷺکیلئے کسی بیرونی دباو ¿ کو خاطر میں نہ لائے اور اس سلسلہ میں جرا ¿تمندانہ اقدامات کئے جائیں۔ گستاخ بلاگرز فی الفور گرفتار کر کے قانون کے مطابق سخت سزائیں دی جائیں تاکہ آئندہ کسی کو اسلام، قرآن اور نبی اکرم ﷺ کی شان اقدس میں گستاخیوں کی جرا ت نہ ہو۔

About Editor

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*